شرائط و ضوابط

یہ شرائط و ضوابط کا رڈ مالکان کو جاری کردہ الائیڈ ویزا ڈیبٹ کارڈ اور ATMتک بائیو میٹر ک رسائی کی مد میں بینک اور آپ کے درمیان ایک معاہدہ کی صورت میں طے پاتی ہیں۔ان شرائط و ضوابط کو بینک اکا ؤنٹ کے لیے بینک کی جانب سے وقتا ً فوقتا ً عائدکر دہ شرائط و ضوابط کے سا تھ شامل کر کے پڑھا جا ئے گا۔


  • 1. ان شرائط و ضو ابط میں

    • ”اکاؤنٹ“سے مراد کا رڈ مالک کا(انفرا دی یا کسی دوسرے شخص کے ساتھ مشترکہ طور پر) بینک میں کھو لا گیا یا کھو لا جانے والا اکاؤ نٹ ہے جس کا نمبر کارڈ کے لیے دی گئی

    درخواست فارم پر درج ہے یا درج کیا جا ئے گا اور جس کی بابت کا رڈ مالک سے مناسب انداز میں معلو مات کا تبا دلہ کیاگیا یا جا ئے گا۔

    • ”بینک“ سے مرا د الا ئیڈ بینک لمیٹڈ ہے۔
    • ”برانچ“ کا مطلب الائیڈ بینک لمیٹڈ کی وہ شاخ ہے جس میں کا رڈ مالک کاا کا ؤنٹ مو جو د ہے۔
    • ”کار ڈ“ سے مرا د الائیڈ ویزا ڈیبٹ کا رڈ ہے جس میں متبا دل کے طور پر جاری کیا گیا کارڈ بھی شامل ہے۔
    • ”کارڈ ہولڈ ر /مالک“سے مراد وہ فرد ہے کہ جس کو کار ڈ جاری کیا گیا اور جو بینک کے معینہ دا ئرہ اختیا رمیں رہتے ہوئے انفرادی طور پر اکا ؤنٹ کو چلا نے کا اختیا ر رکھتا ہے۔
    • ”PIN“ سے مراد ذاتی شناخت کا نمبر یاخفیہ نمبر ہے جسے کا رڈ مالک وقتا ً فوقتا ً کار ڈ کے حو الے سے استعمال میں لاتا ہے اور اس میں ٹیلی فون پر استعمال کے لیے ذاتی شناختی نمبر
    • یا TPINبھی شامل ہے کہ جسے کا رڈ مالک بو قت ضرورت بالحاظ قواعدا ستعمال میں لانے کا مجا ز ہے۔
    • ”ٹرانزیکشن/لین دین“ کا یہاں معنی بذریعہ کار ڈ / بائیو میٹر ک نکلوا ئی گئی رقم یا ادئیگی یا کارڈ/ بائیو میٹرک کے استعمال کے ضمن میں مجا ز ذرائع سے کی گئی کو ئی رقم کی واپسی ہے جو

    اکا ؤنٹ کو کریڈٹ یا ڈیبٹ کر دے۔

    • ”ای کامرس“ سے مراد آن لا ئن خریدا ری کی مدمیں کیا گیا لین دین ہے۔ یہاں ای کا مر س کا مطلب الیکٹر انک کامرس ہے جس میں انٹر نیٹ اور مو با ئل کامرس دونوں شا مل ہیں۔
    • ”ویزا“ کا مطلب ویزا انٹر نیشنل سروس ایسو سی ایشن ہے۔
    • ”بائیو میٹرک“سے مراد ATMمشین تک رسا ئی کے لیے انگو ٹھے کے نشان کا استعمال ہے۔


  • 2. کا رڈ سے متعلقہ سہو لیات

    • کا ر ڈ /بائیو میٹر ک کو کسی بھی خود کار ٹیلر مشین (ATM) پر رقم نکلو انے کے لیے استعمال میں لا یا جا سکتا ہے یا اس کے ذریعے ATMسے ا ضا فی خدما ت بھی حا صل کی جا سکتی ہیں  (مثا ل کے طور پر ملکی سطح پر الائیڈ بینک یاپاکستا ن کے کسی دیگر بینک میں ایک اکاؤ نٹ سے دوسرے اکا ؤنٹ میں رقم کی منتقلی اور یوٹیلٹی بلز کی ادا ئیگی)۔ اس کار ڈ کے ذریعے آن لائن یا رٹیلر سے یا دنیا بھر میں مو جو د ایسے سپلائرز کے جنہوں نے ویز ا سا ئن آویز اں کر رکھا ہواور جو یہ کارڈ قبول کرتے ہوں،سے اشیاء اور / یا خدما ت خریدا ری /حصول کے لیے ادائیگی بھی کی جا سکتی ہے تاہم اس ضمن میں وقتا ً فوقتاًمروجہ ویز ا قواعد اور ضوا بط لاگو ہو ں گے۔
    • کار ڈ ہولڈر بینک کے اختیا ر نامے کے مطابق ڈیجیٹل بینکنگ کی دیگر سہو لیات استعمال کر سکتا ہے، جن میں انٹرنیٹ اور موبا ئل بینکنگ، ایس ایم ایس بینکنگ اور IVRکی سہولیات اور ادائیگی سے متعلق کو ئی بھی ایسی دیگر خدما ت / سہو لیات شامل ہیں کہ جو بینک کی جانب سے الا ئیڈ ویزاڈیبٹ کا رڈ ہولڈر کو وقتا ً فوقتا ً دستیا ب ہوں اور جس کے لیے کارڈ مالک بینک کے مروجہ طریقہ کار کے مطابق سائن اپ /Optکرے تاہم یہ سہو لیا ت ان مذکورہ سہولیات تک محدود نہیں۔بینک الیکٹر انک فنڈز ٹرانسفر (EFT) کی سہو لت صرف اُن ادائیگی کے ذرا ئع اور آلات کے لیے فراہم کرے گاکہ جن کے لیے کسٹمر کی رضا مند ی حا صل کی گئی ہو۔
    • اگر کارڈ مالک کارڈ کو غیر ملکی کرنسی میں ادائیگی کے لیے استعمال کرتا ہے جیسا کہ پاکستا ن سے باہر ٹرا نزیکشنز (بشمول ATMs، POSسے خریدا ری اور ای کامرس ٹر انزیکشنز)،تو کا رڈ مالک کو تبادلہ زر کی مد میں اخراجات اور وقتا ً فوقتاکیے گئے لین دین پر لاگو چارجز بھی ادا کرنا ہوں گے۔تاہم تبادلہ زر کے ضمن میں سٹیٹ بینک آف پاکستا ن کی جانب سے عائد کردہ پابندی یا کسی دیگر وجہ سے اس سلسلہ میں درپیش رکاوٹ یا اس سہو لت کی عدم مو جو دگی کی کو ئی بھی ذمہ دا ری بینک پر عائد نہ ہو گی اور نہ بینک اس حوا لے سے کو ئی وارنٹی دیتا ہے۔


  • 3. کار ڈ کا اجرا ء

    بینک صر ف اسی وقت کارڈ کا اجرا ء کرے گا کہ جب کار ڈ مالک درخواست فارم مکمل طور پر پرُ کرکے ارسال کرے مزید برآں وہ بینک اکا ؤنٹ سے متعلقہ قواعد و ضوابط کو قبول کرے اور بینک اس درخوا ست فارم کو قبول کرے۔ بینک میں اکا ؤنٹ کھلوانا اور اسے مؤثر رکھنا کار ڈ کے اجرا ء اور بائیو میٹرک کے استعما ل کے لیے لاز می شر ط ہے۔


  • 4. کارڈ کی ملکیت

    کار ڈ بینک کی ملکیت ہے یا بینک کے مجا ز افسر، نوکر،ملا زم، بینک سے منسلکہ افراد یا ایجنٹ کی، جو اس کارڈ کو اپنے تصرف میں لینے کا اختیا ر رکھتے ہیں اور کارڈ مالک کو مذکورہ /بینک کی کلی صوا بدید پر کیے گئے مطا لبہ کی صورت میں اس کا رڈ کو لوٹا نا یا اس کے استعمال کو ترک کرنا ہو گا اور بینک اس سلسلہ میں کارڈ مالک کو پہنچنے والے کسی بھی نقصان کا ذمہ دار نہیں۔ کارڈ کو کارڈ
    ما لک کے علاوہ کوئی شخص استعمال نہ کرے /کرنے کا مجا ز نہیں۔ اگر کا رڈ بینک کی جانب سے اپنی تحویل میں لیا جاتا ہے یا منسو خ کر دیا جاتا تو اس صورت میں با ئیو میٹرک کی سہولت بھی منقطع ہو جا ئے گی۔


  • 5. کارڈ کو فعال اور قابل استعمال بنا نا (ایکٹیو یٹ کروانا)

    • کار ڈ اس وقت تک فعال اور قابل استعمال نہیں ہو گا کہ جب تک کا ر ڈمالک کا رڈ کے استعمال سے متعلقہ شرائط و ضوا بط کو قبو ل نہ کر لے۔ اس کے بعد کار ڈ کو بینک کی جانب سےمتعین کئے گئے طریقے کے مطا بق فعال کروا نا ہو گا۔ کار ڈ صر ف اس مد ت تک فعال رہے گا کہ جو اس پر درج کی گئی ہے اور اگر مذکو رہ مدت گزر جا ئے یا بینک کا رڈ مالک کو تحریری نوٹس ارسال کر کے کارڈ کی بینک کو واپسی کا مطالبہ کرے تو کار ڈ کو استعمال میں نہیں لا یا جا سکتا۔کارڈ کے فعال رہنے کی مدت / مدت تنسیخ گزر جانے کے بعد اسے میگنیٹک ٹیپ کے درمیا ن سے برا بر حصوں میں کاٹ کرضائع کر دینا ضرو ری ہے۔ بائیو میٹرک کے استعمال کے لیے کارڈ کوفعال کرنا لازمی ہے۔
    • ای۔کامرس لین دین کی سہو لت کو مؤ ثر بنا نے /فعال کرنے کے لیے کار ڈمالک کو بینک کے متعین کر دہ طریقہ کارکے مطابق الگ سے درخوا ست دینا ہو گی۔ کا رڈپرای۔ کامرس لین دین کی سہو لت محدود مدت تک کھو لی جا ئے گی (ایکٹیو یشن کی مدت)۔ اس سہو لت کو فعال رکھنے کی ہر معینہ مدت گز ر جانے کے بعد کار ڈ مالک کو اس سہو لت کے لیے از سر نو درخوا ست دینا ہو گی۔ اس سہو لت کو مستقل بنیا دوں پر مؤ ثر رکھنے کی اجا زت نہیں ہے۔


  • 6. کا رڈ کی گمشدگی یا چو ری

    • کار ڈ ہو لڈ ر کے لیے لازم ہے کہ وہ اس کارڈ اور PINکے غیر مجاز استعمال کو روکنے کے لیے تمام ضروری احتیا طی تدابیر اپنا ئے۔اگر کار ڈ گم یا چوری ہو جا ئے تو اس صور ت میں کارڈ مالک کے لیے ضروری ہے کہ وہ فوری طور پر بینک کی جانب وقتا ً فوقتا ً اس مقصد کے لیے دیئے گئے نمبر(نمبرز) پر ٹیلی فون کرکے، بینک کو اس بابت مطلع کرے مز ید برآں اس چوری یا گمشدگی کے بار ے میں بینک کو تحریری طور پر بھی فور ی اطلا ع دے۔ بینک کو با ضا بطہ اطلاع مو صول ہونے تک کاتمام لین دین کی ذمہ داری کار ڈ مالک پر عائد ہو تی ہے۔
    • کارڈ مالک کو چوری یا گم ہو جانے والے کارڈ کی بازیا بی کی کو ششوں کو مؤ ثر بنانے کے لیے بینک کے افسران، ملازمین، نما ئندگان یا ایجنٹس اور /یا قا نو ن نافذ کرنے والی ایجنسیز کے سا تھ تعاون کرنا ہو گا۔ اگر بینک یہ سمجھے کہ کارڈمالک اور اکاؤنٹ سے متعلقہ معلو مات ظاہر کر نے سے کار ڈ مالک کو کارڈ کے چوری، گم یا غیر مجاز استعما ل کے نتیجہ میں پہنچنے والے نقصا ن سے محفوظ رکھا جا سکتا ہے تو بینک مذکو رہ معلومات ظاہر کر سکتا ہے۔بینک کوکارڈ کی چوری یا گمشدگی کا نوٹس مو صول ہونے کے بعد اگر کار ڈ مل جا ئے تو کا رڈ مالک اسے پھر سے استعمال نہیں کر سکتا۔
      ا س صور ت میں کارڈ کو فوری طور پر میگنیٹک سٹرپ سے برا بر حصو ں میں کاٹ کر بینک کو واپس کرنا ہو گا۔

  • 7. پن

    کارڈ مالک کی درخوا ست پر بینک کا رڈ مالک کو PINجاری کرے گا۔ بینک کی جانب سے کارڈ مالک کو PINکے اجرا ء کے بعد کار ڈ مالک اس کے غیر مجاز استعمال کو روکنے کے لیے تمام مناسب احتیا طی تدا بیر اختیا ر کرے گا اور بینک کی جانب سے جاری کردہ PINمیلر کو و صول ہونےکے بعد فوراً ضا ئع کر دے گا۔ کارڈ  مالک متفق ہے کہ وہ PINکو کسی دیگر شخص پر ظاہر نہیں کرے گا، نہ PINکو کار ڈ یا کارڈ کے ساتھ عمو ماً رکھی جانے والے اشیا ء پر لکھے گا اور نہ ہی اس صورت میں کہیں لکھے گا کہ اسے کو ئی دیگر شخص سمجھ سکے اوراس بات سے آگا ہ ہو تے ہی کہ PINکا کسی دیگر شخص کو پتہ چل گیا ہے یا کسی دیگر شخص کو اس کے بار ے میں علم ہو سکتا ہے، کار ڈ  مالک کوجلد از جلد بینک کو اس بابت مطلع کرنا ہو گا۔اگر PINکارڈ پر درج ہواور کارڈ گم یا چوری ہو جائے تو PINسے متعلقہ تمام لین دین کی ذمہ داری کار ڈ  مالک پر عائد ہو گی۔اگرکار ڈ  مالک کسی پر PINکو ظاہر کر دیتا ہے تو بعد ازاں PINسے متعلقہ تمام ٹرانزیکشن کی ذمہ داری بھی کار ڈ  مالک پر ہی عائد ہوتی ہے۔


  • 8. چارجز

    کار ڈ  مالک متفق ہے کہ وہ کارڈ / بائیو میٹر ک کے استعمال کے سلسلہ میں بینک کی جانب سے چا رج کیے جانے والے تمام چارجز، فیسیں، ڈیو ٹی، لیویز اور دیگر اخرا جات (جنہیں مجمو عی طور پر ”چارجز“ کہا جا ئے گا) ادا کرے گا۔ کار ڈ  مالک کو تما م یا ان میں سے کو ئی بھی چا رجز بینک کے مطالبہ پر فوری ادا اور واپس کر نا ہوں گے۔ ان چارجز میں بینک کی صوابدید پر وقتا ً فوقتاً تبدیلی لائی جا سکتی ہے اور کار ڈ  مالک کو اس ضمن میں اخبارات میں شائع کی جانے والی اطلا ع عام یا کسی خصو صی طریقہ سے پیشگی مطلع کیا جائے گا۔اگرکار ڈ  مالک نوٹس کی مدت کے گزر جانے کے بعد یابینک چارجز کی تفصیلات میں ترمیم کے مو ئثر ہو نے کی تاریخ گزر جانے کے بعد بھی کارڈ اور / یا بائیو میٹر ک کا استعمال جا ری رکھتا ہے تو بینک اس بات پر یقین کرنے کا مؤ ثر حق رکھتا ہے کہ کار ڈ  مالک نے ان شرائط و ضو ابط کو قبول کر لیا ہے۔ کار ڈ  مالک مذکو رہ چا رجز کے مروجہ ریٹس کی معلو مات، بینک قریبی برانچ سے رجو ع کر کےحا صل کر سکتا ہے یا اسے بینک کی کا رپور یٹ ویب سائٹ (www.abl.com) سے ڈاؤن لو ڈ کر سکتا ہے۔ تمام چارجز نا قابل واپسی ہیں سوائے ان چارجز کے کہ جن کی واپسی کی بینک اجا زت دے۔ کارڈ کے استعمال کے سلسلہ میں ویزا سے متعلقہ تمام چارجز اور فیسیں اور بعد ازاں ویزا کی جانب سے تبدیل کردہ مذکو رہ چارجز اور فیسیں مکمل طور پر کارڈ مالک کے اکا ؤنٹ سے ادا ہوں گی اور ان کی ذمہ دا ری بینک پر عائد نہ ہو گی۔


  • 9. مکمل استعمال

    • ایک دن میں کیے جانے والے کسی بھی لین دین کی کل رقم، رقم کی اس حد اور دیگر شرائط تک محدود ہو گی کہ جن کی بابت کارڈ مالک کو بینک کی جانب سے وقتاً فوقتا ً  تحریر ی طور پر نوٹس دیا گیا اور اس کا اطلاق نوٹس کے مؤ ثر ہونے کی تا ریخ سے ہو گا۔کارڈ مالک کسی بھی وقت بائیو میٹرک یا کارڈ سے اپنے اکا ؤنٹ میں رکھی گئی رقم سے زیا دہ رقم نکلوا نے کامجاز نہ ہو گا مزید برآں اسے بینک کے مروجہ چارجز (اگر کو ئی ہوں) کے مطابق رقم بھی اکاؤنٹ میں چھوڑنا ہو گی۔
    • اگر بینک کو کسی لین دین پر عمل در آمد کی درخوا ست مو صو ل ہو تو بینک ایسی دیگر ٹرانزیکشن کو ترجیح دیتے ہو ئے کہ جن پر عمل درآمد کی درخوا ست پہلے مو صو ل ہوئی اور جنہیں اب تک ڈیبٹ نہ کیا جا سکا اور حدود (اس سے متعلق تفصیلا ت حا صل کرنے کے لیے www.abl.com وزٹ کریں)میں ہونے والے لین دین کی دیگر کا رر وائیوں کو بھی ملحوظ خا طر رکھتے ہو ئے یااس ضمن میں لاگو شرائط و ضو ابط سے متعلقہ شرائط پر عمل کر تے ہوئے اور اگر بینک یہ سمجھے کہ مطلوبہ لین دین کی بابت ادائیگی کے لیے اکا ؤنٹ میں وہ وافر رقم مو جود نہیں کہ جس کی درخوا ست کی گئی ہے تو بینک اپنی کلی صوابدید پر لین دین کی درخوا ست پر عمل کرنے سے انکا ر کر سکتا ہے۔ اس صورت میں لین دین کا حسا ب اکا ؤنٹ میں ڈیبٹ نہ ہو گا۔لین دین کی کسی درخواست پر عمل نہ ہونے کے نیتجہ میں پہنچنے والے کسی بھی نقصا ن کی ذمہ داری بینک پر عائد نہ ہو گی۔کا رڈمالک بینک کی جا نب سے اپنے اکاؤنٹ پر وقتاً فوقتاً متعین کر دہ حد سے زیا دہ الیکڑ انک فنڈ ٹرانسفرز (EFT) سے متعلقہ لین دین نہیں کر سکتا۔


  • 10. وافر فنڈز کی عدم دستیا بی

    اگر کسی لین دین یا اکاؤ نٹ سے وا جب الاداکسی دیگر رقم بشمو ل مارک اپ، فیس، چارجز، تبادلہ زر کے اخر جا ت، سروس فیس یا بینک کو واجب الادا دیگر اخرا جات کی ادائیگی کے لیے اکاؤنٹ میں وافر رقم مو جود نہیں تو بینک اپنی کلی صوابدید پر(اور اس بابت ہر طرح کی ذمہ داری سے آزاد ہو کر) ،بینک میں مو جو د کارڈ مالک کے کسی دیگر اکا ؤنٹ سے مذکورہ و مطلوبہ رقم کی کٹوتی کا اختیا ر رکھتا ہے۔اس ضمن میں کا رڈ مالک بینک کو اجازت اور اختیا ر دیتا ہے کہ وہ کارڈ مالک کی جانب سے اکاؤنٹ کے ذیل چارج یا انجام دیئے جانے والے لین دین کی مد میں مذکورہ دیگراکاؤنٹ(اکاؤنٹس) میں موجود کریڈٹ بیلنس کو یکجا، ضم یا متحرک کر دے۔


  • 11. کارڈ کو قبول کرنے سے انکار

    کسی بھی لین دین کے سلسلہ میں ریٹیلر، سپلا ئر، دیگر بینک، کار ڈ کو استعمال میں لانے والی مشین کی جانب سے کارڈ کوقبول کرنے سے انکا ر کی صور ت میں ہونے والے کسی بھی نقصا ن کی ذمہ داری بینک پر عائد نہ ہو گی۔ اس بابت ریٹیلر یا سپلائر پر کا رڈ مالک کی جانب سے دائر کیے گئے کسی دعوے کی مد میں بینک پر جوا بی دعویٰ یا سیٹ آف کلیم قبول نہ کیا جائے گا۔ بینک بذریعہ کارڈ خرید ی گئی اشیا ء اور / یا ان کے استعما ل، مختص یا حا صل کی گئی خدمات کے معیا ر، مقدار،ان اشیاء یا خدمات کے حسب ضر ورت ہونے، قبولیت یا قابل فروخت ہونے کے سلسلہ میں یا ریٹیلر اور سپلا ئر کی جانب سے کارڈ پرلین دین سے انکار یا عمل در آمد نہ کرنے کے حوالے کسی بھی طور پر ذمہ دا ر نہیں۔ریٹیلر یا سپلا ئر کو کسی بھی صورت میں بینک کا ایجنٹ یا نما ئندہ تسلیم نہیں کیا جائے گا اوربینک ریٹیلر یا سپلا ئر کی جانب سے کی گئی کسی معاہدے کی خلا ف ورزی، عمل یا دیگر کارروا ئیوں کاکسی بھی صور ت میں ذمہ دا رنہیں ہو گا۔


  • 12. سٹیٹمنٹ

    • کارڈ مالک کے لیے ضروری ہے کہ وہ اپنی ٹرانزیکشنز کا ریکار ڈ چیک کرنے کے لیے بینک کی جانب سے معینہ تواتر سے ارسال کی جانے وا لی اکاؤنٹ سٹیٹمنٹ دیکھے اس سہو لت کو بذریعہ انٹر نیٹ بینکنگ بھی حا صل کیا جا سکتا ہے اور مذکو رہ معلو مات ATMپر کار ڈ یا بائیو میٹر ک کے استعمال سے منی سٹیٹمنٹ کی صورت میں بھی حا صل کی جا سکتی ہے۔
    • بینک کی جانب سے کا رڈ مالک کو ارسال کردہ اکا ؤنٹ سٹیٹمنٹ میں اکاؤنٹ میں ہونے والے لین دین کی بابت کوئی تضاد یا بے قاعدگی مو جود ہے تو کار ڈ مالک بینک کو اس ضمن میں سٹیٹمنٹ کے اجرا ء یا لین دین (جو بھی بعد میں ہو) کے دن سے لے کر 7دن میں تحریر ی طور پر مطلع کرے گا۔ اگر بینک کو 7دن میں تضا د کی بابت ایسی کو ئی معلو مات مو صو ل نہ ہو ئیں تو بینک کو یہ اختیا ر حا صل ہے کہ وہ تمام لین دین کو درست تسلیم کرے اور اس سٹیٹمنٹ کو ایسے تمام حوالوں کے لیے قطعی ثبو ت کے طور پر اپنے پا س رکھے۔ مزید بر آں کار ڈ / بائیو میٹر ک کے کسی ATMپر استعمال یا مجاز ذرائع سے کا رڈ کے آن لائن استعما ل پر کا میا بی سے لین دین ہو نے کے باجودکم ادائیگی یا ادائیگی نہ ہونے کی اطلا ع مو صو ل ہو تو کا رڈ مالک کو اس لین دین کے بعد 7دفتری دنو ں کے اند ر بینک کو تحریری طور پرلازمی مطلع کر نا ہو گا بصورت دیگر اس معاملے کے لیے بینک سٹیٹمنٹ اور ریکار ڈ قطعی سمجھا جائے گا۔
    • مزید برآں کارڈ مالک کا رڈ کو ایسے ATMپر استعمال کرتا ہے کہ جس کا انتظا م بینک کے پاس نہیں تو اس صور ت میں بینک 1-Linkسوئچ کے ارسال کردہ ریکارڈ کو ملحو ظ خا طر رکھے گا اور اس مدت میں بینک کی جانب سے کا ررڈ مالک کے اکاؤنٹ میں کسی وجہ سے ڈیبٹ نہ کی جانے والے لین دین کو بعد ازاں کسی بھی تاریخ پر کارڈ مالک کو پیشگی اطلاع دیئے بغیر ڈائریکٹ ڈیبٹ کی صور ت میں مکمل کیا جا ئے گا۔


  • 13. لین دین کی تنسیخ

    مکمل ہو جا نے کے بعد کا رڈ مالک کی جا نب سے لین دین کی درخواست کو منسو خ نہیں کیا جا سکے گا۔ تا ہم خاص طور پر الیکٹرا نک فنڈ ٹرانسفر(EFT) کی صور ت میں کم از کم مطلوبہ معلو مات کی عد م دستیا بی یا معقول تفصیلا ت کے ساتھ لازمی فیلڈز /خالی جگہوں کے پُر نہ کیے جا نے پر، بینک لین دین کی کسی بھی درخواست کو معطل یا منسو خ کرنے کا اختیا ر رکھتا ہے۔


  • 14. پوسٹنگ / ترسیل

    ان شرائط و ضو ابط کے تحت بینک عام طور پر معقول اندا ز میں متعلقہ ہدا یات کے ملتے ہی کسی لین دین کی مطلو بہ رقم اکا ؤنٹ میں ڈیبٹ کر دیتا ہے تاہم بینک اس ضمن میں ہونے والی کسی تاخیر کے نیتجہ میں پہنچے والے کسی نقصا ن کا ذمہ دار نہ ہو گا۔


  • 15. رقم کی واپسی

    اگر رٹیلر یا سپلائرلین دین کی مد میں رقم واپس کرتا ہے تو بینک اس صورت میں اس رقم کو کریڈٹ کرے گا کہ جب رٹیلر یا سپلائر کی جانب سے معقول ہدایات اوراس سلسلہ میں رقم کی واپسی کے لیے فنڈ فراہم کیا جائے۔ تاہم  بینک مذکو رہ فنڈ اور ہدا یات کی وصولی میں ہونے والی کسی تاخیر کے نیتجہ میں پہنچے والے کسی نقصا ن کا ذمہ دار نہ ہو گا۔


  • 16. پرو مو شنز / مرا عات

    سابقہ شرا ئط و ضوا بط پر اثر انداز ہو ئے بغیر، بینک اپنی مکمل صوابدید پر وقتا ً فوقتا ً اپنے تمام یا کسی کا رڈ مالک کے درمیا ن خا ص طور پر منتخب کی گئی کمپنیز (”affiliates/منسلک ادا رے“)کی اشیا ء اور خدمات کی ضمن میں مرا عات کی پیشکش کرسکتا ہے۔ اگر کا رڈ مالک کو ایسی کسی رعا یت کی پیشکش کی گئی اور کا رڈ مالک نے اس پیشکش سے فائدہ اٹھا یا تو اس صور ت میں  کا رڈ مالک متفق ہے کہ وہ مذکو رہ شرائط و ضوا بط کے ہمرا ہ ان مرا عات سے وابستہ شرائط و ضوا بط کا ماننے کا بھی پابند ہو گا کہ جو بینک کےaffiliates /منسلک ادا روں کی جانب سے عائد کی گئی ہوں۔


  • 17. تنسیخ

    بینک، کا رڈ مالک کو بینک کے ریکا رڈ زمیں درج پتہ پر تحریر ی درخواست دے کر ان شرائط و ضو ابط پر مشتمل معاہدے کو منسو خ کر نے کا اختیار رکھتا ہے۔ کا رڈ مالک، بینک کو تحریر ی درخواست دے کراور کارڈ کو میگنیٹک سٹرپ سے برابر حصو ں میں کاٹ کربینک کو واپس کرنے کے بعد ان شرائط و ضو ابط پر مشتمل معا ہدے کو ختم کر سکتا ہے۔ منسو خی کا یہ عمل واجب الا دا رقم کی واپسی،  کا رڈ مالک کی جانب سے بینک کو منسوخی کا نوٹس وصول ہونے اور ان شرائط و ضو ابط کی متعلقہ شقوں کی انجا م دہی کے بعد مکمل کیا جا ئے گا۔


  • 18. معاہدہ مکمل طور پر مؤ ثر اور نا فذ العمل رہے گا

    ان شرائط و ضوابط پر مشتمل معاہدے کو اس وقت تک مکمل طورپر مؤ ثر اور نا فذ العمل سمجھا جائے گا کہ جب تک کہ کو ئی لین دین مکمل ہونے کے بعد تنسیخ سے قبل اکا ؤنٹ میں ڈیبٹ

    نہ ہو ئی ہو۔


  • 19. بعد از تنسیخ

    ان شرائط و ضوابط پر مشتمل معا ہد ے کی تنسیخ کے بعد اور قبل اس معاہدے کے تحت طے پانے والی ذمہ دا ریوں اور انجا م دئیے گئے یا انجا م دئیے جانے والے متعلقہ امو ر پر کو ئی اثر نہ ہو گا۔


  • 20. ذمہ داریو ں کی حد بندی

    اگر ہڑتا ل، صنعتی کاررو ائی، بجلی کی بند ش، سسٹم یا آلات میں ہو نے والی ایسی خرابی جو بینک کے اختیا ر سے باہر ہو،کی وجہ سے اگر کا رڈ مالک کو بینک خدما ت دینے سے قاصر رہتا ہے یا مطلو بہ خدما ت کی انجام دہی میں تا خیر ہوتی ہے تو مذکور ہ عوامل کے نتیجہ میں  کا رڈ مالک کو پہنچنے والے کسی نقصان کا بینک ذمہ دار نہیں ہوگا۔ بینک کسی بھی صورت میں ATMرومز میں کارڈ یا با ئیو میٹرک کے استعمال کے دورا ن  کا رڈ مالک کی حا دثاتی موت، کا رڈ مالک کے زخمی ہونے یا کا رڈ مالک کی املا ک کو نقصان پہنچنے کی صورت میں ذمہ دار نہ ہو گا،کا رڈ مالک یہا ں متفق ہے کہ وہ کا رڈیا بائیو میٹرک کی سہو لت کو اپنے رسک، خر چہ اور ذمہ داری پر استعمال کرے گا۔ مزید بر آں جب کا رڈ مالک کی جانب سے کار ڈ / بائیو میٹرک کو یوٹیلٹی یا دیگر بلزکی ادائیگی کے لیے استعمال کیا جاتا ہے توتاخیر سے ادائیگی کی صورت میں یوٹیلٹی یا خدما ت کے فراہم کنندہ کی جانب سے لاگو جرمانے، کو سٹ اور سرچارج کی ادائیگی کی ذمہ داری مکمل طور پرکا رڈ مالک پرعائد ہو گی، سوائے اس صو رت کے کہ کا رڈ مالک کی جانب سے بینک کو اس بابت مؤ ثر نو ٹس اور معقول تفصیلات فراہم کی گئی ہوں۔ای کا مرس کو مؤثر رکھنے کی معینہ مدت کے دور ان بذریعہ ای کامرس غیر مجاز لین دین(ٹرانزیکشنز) کی صورت میں بینک نہ تو ذمہ دار ہو گا اور نہ ہی کا رڈ مالک کوادا ئیگی کرنے کا پابند ہو گا۔


  • 21. شرائط و ضو ابط میں تبدیلی

    بینک اپنی مکمل صوا بدید پر کسی بھی وقت ان شرائط و ضوا بط اور ان کے تحت لاگو چارجز میں تبدیلی کر سکتا ہے تاہم وہ کا رڈ مالک کو اس تبدیلی سے کم از کم اکیس(21)دن قبل عمومی،خصو صی
    نو ٹس اور اخبا ر میں اشاعت کے ذریعے پیشگی اطلاع دے گا۔ ایسی تمام تبدیلیاں نوٹس میں درج تاریخ یا اس میں بینک کی جا نب سے واضح طور پر متعین کی گئی کسی بعد کی تاریخ سے مؤثر ہوں گی۔ اگر ان تبدیلیوں کے مؤ ثر ہو نے کی تاریخ کے بعد کا رڈ مالک، کا رڈ کا استعمال جاری رکھتا ہے تو بینک کے پاس اس بات کو تسلیم کرنے کا مو ئثر حق موجودہے کہ کا رڈ مالک نے شرائط و ضوابط میں ہونے والی ان تبدیلوں کو تسلیم کرنے پر اپنی آمادگی کا اظہار کر دیا ہے۔


  • 22.معلو مات افشا کرنا /کرنے کا اختیا ر

    • کا رڈ مالک بینک کو مجا ز ٹھہر اتا ہے کہ وہ کا رڈ مالک سے متعلقہ معلومات بینک کے گرو پ آف  کمپنیز میں مو جو د کسی بھی کمپنی، تھرڈ پارٹی پرو سیسرز / انتظام کندگا ن،خدمات فراہم کرنے والے یا ایسی کارڈ پرسنلا ئزیشن فرمز کہ جن کی خدمات بینک نے حا صل کر رکھی ہوں، کو فراہم کر سکتا ہے۔ ان معلومات میں کا رڈ مالک، کارڈ، اکاؤنٹ اور کسی بھی لین دین سے متعلقہ ایسی معلو مات شامل ہیں کہ جن کے بارے میں بینک اپنی صوابدید پر یہ خیال کر ے کہ ان کا ظاہر کرنا ضروری اور مطلو ب ہے تا ہم یہ معلو مات مذکو رہ معلو ما ت تک محدود نہیں۔
    • علا وہ ازیں بینک کا رڈ مالک سے وابستہ کارڈ، اکا ؤنٹ اور کسی لین دین سے متعلقہ ان معلو مات کو قانو نی ضرورت یا ضابطے کی بنا پر بھی ظاہر کر سکتا ہے۔

  • 23. قانو نی ذمہ داری سے بریت

    کا رڈ مالک بینک کو تمام ایسے خسا روں،نقصانا ت یا اخرا جات سے مبرا رکھے گا کہ جو کا رڈ مالک کی جانب سے اس کا رڈکے استعمال اور کسی لین دین کے سلسلہ میں ان شرائط و ضو ابط کی
    خلا ف ورزی چاہے وہ خلا ف قانو ن یا غیر مجاز کاررو ائی  کے صورت میں ہو یا کسی دیگر وجہ سے،بینک کو برداشت کرنا پڑیں۔ اس حو الے سے کا رڈ مالک کی وفات کی صورت میں ضروری ہے کہ کا رڈ مالک کے قانو نی وارثان کی جانب سے بینک کو اکاؤنٹ بند کرنے کی اطلا ع دی جا ئے اور کار ڈ فوری طور پر بینک کو واپس کر دیا جائے۔قانو نی وراثت کے سر ٹیفکیٹ اور بینک کو درکار دیگر دستا ویز ات کی دستیا بی تک کا رڈ مالک کا اکا ؤنٹ منجمد رہے گا اور اکاؤ نٹ کے منجمد ہو نے کی تاریخ سے قبل اکاؤنٹ،جس کے لیےکا رڈ مالک کا PINاستعمال ہو رہا ہے کا رڈ مالک کا اکاؤنٹ ہی تصور ہو گا، یہا ں تک کہ وفات کانوٹس تحریری طور پر بینک کو مو صول ہو جا ئے۔

  • 24. بینک اکا ؤنٹ سے متعلقہ شرائط و ضو ابط

    ان شرا ئط و ضو ابط کو اکا ؤنٹ کھلو انے کی شرائط و ضوابط کے ساتھ پڑھا جائے گا کہ جو اکاؤنٹ پر وقتا ً فوقتا ً لاگو ہوں گی۔


  • 25. قانو نی انضباط

    یہ شرائط و ضو ابط ڈیبٹ کار ڈ کے شرائط ضوا بط، سٹیٹ بینک آف پاکستا ن کے مراسلات اور ہدایات ناموں (جو کہ وقتاً فوقتاً لاگو ہوں) سے متصل / مشروط ہیں اور ان کا نفاذ اسلامی جمہو ریہ پاکستان کہ ضابطہ قوانین کے تحت عمل میں لایا گیا ہے۔ پاکستا ن کی عدالتیں خصوی قوانین کے تحت ان پر عدالتی اختیار رکھتی ہیں۔


  • 26. تشریح

    ان شرائط و ضو ابط کو اردو اورپاکستا ن کی دیگر علاقائی زبانوں میں بھی جاری کیا جا ئے گا۔ اگر مندرجہ بالا شقوں کی تشریح اور نفاذ کے دوران کو ئی تنا زعہ یا اختلا ف پیدا ہوتوان شرائط و ضوابط کے انگریزی ورژن سے استفادہ کیا جائے گا اور اسے اصل تصور کیا جائے گا۔


  • 27. رابطہ کی تفصیلا ت

    کارڈ ہولڈر کی جا نب سے بینک کے مجازافسر / نما ئندے کو بذریعہ فون یا تحریری طور پر دی گئی مو جود ہ / حالیہ پتہ کے اندراج کی درخو است پر بینک ریکا رڈ میں مو جود سابقہ / حالیہ پتہ میں ترمیم کا اختیا ر رکھتا ہے۔


  • 28. معمول کے مطابق دیکھ بھا ل

    اگر معمول کے مطابق دیکھ بھا ل یا سسٹم میں بہتری وغیر ہ کے سلسلہ میں اگر کار ڈ اور خا ص طور پر الیکٹرا نک فنڈ ٹرا نسفر (EFT) سے متعلقہ سہو لیات عارضی طور پر معطل رہیں تو بینک کارڈ ہو لڈر ز کو بذریعہ ایس ایم ایس، ای میل یا اخبار میں اشتہا را ت پیشگی اطلا ع دے گا۔


  • 29. تنا زعے کا حل

    الیکٹرانک فنڈ ٹرانسفر (EFT) کے سلسلہ میں، پر یہ بات یہاں تک محدود نہیں، ہونے والے کسی تنازعے /غلطی کے تصفیہ کے لیے کا رڈ ہو لڈر کو فوری طور ہر بینک کے کسٹمر سروس سپورٹ سینٹر سے رابطہ کر کے بینک کودرکار ضروری معلو مات / تفصیلات فراہم کر نا ہو گی۔ اگر کا رڈ ہو لڈر مطلو بہ معلو مات /تفصیلات فراہم کرنے سے قاصر رہے یا ان کو جمع کروانے میں تا خیر ہو جا ئے تو اس صور ت میں کا رڈ ہو لڈر کو پہنچنے والے کسی نقصان یا خسا رے کی ذمہ داری بینک پر عائد نہیں ہو گی۔

  • 30. ویزا سے متعلقہ خصو صی خدمات

    ویزا سے متعلقہ خدمات: خدمات، رعا یتیں، مرا عا ت اور ویزا سے متعلقہ تمام دیگر فوائدکی تفصیلات مع متعلقہ شرائط و ضوا بط الا ئیڈ بینک کی کا رپو ریٹ ویب سا ئٹ (www.abl.com) پر دستیا ب ہیں اوریہ ویز ا کی صو ابدید پر کی گئی وقتا ً فوقتا ً تبدیلیوں سے مشرو ط ہیں۔ویز ا کی شرائط و ضو ا بط کو الائیڈ بینک میں اکاؤنٹ کھلو انے کی شرائط و ضوا بط اور الا ئیڈ ویز ا ڈیبٹ کا رڈ کی ان شرائط و ضوا بط کے ساتھ ملاکر پڑھا جا ئے گا کہ جو اکا ؤنٹ اور الا ئیڈ ویزا ڈیبٹ کار ڈ پر وقتا ً فوقتا ً لاگوہوں۔